278

جھتیال یوتھ کا یوم دفاع پہ وطن عزیز کے مجاہدوں اور شہداء کےنام پروقار تقریب

جھتیال یوتھ کا یوم دفاع پہ وطن عزیز کے مجاہدوں اور شہداء کےنام پروقار تقریب:
جھتیال یوتھ کی تیسری بڑی تقریب کا انعقاد بمقام الرحیم پبلک سیکنڈری سکول جوآنہ بنگلہ پہ ہوا۔جس میں حیدر آباد سندھ سے آئے ہوئے تقریب کے مہمان خصوصی پروفیسر مدد علی جھتیال اور ولی محمد جھتیال (حیدرآباد سندھ) نے شرکت کی۔تقریب میں جھتیال یوتھ کے شاہینوں نے بھرپور شرکت کر کے متحد ہونے کا ثبوت دیا۔تقریب کا باقاعدہ آغاز تلاوت قرآن پاک سے کیا گیا جس کا شرف حافظ محمد وسیم جھتیال نےحاصل کیااور نعت رسول مقبول مہرمحمدحسین جھتیال نے پیش کی۔تقریب کی قیادت سینئیر ایسوسی ایشن ورکر حاجی محمد شاکر صاحب نے کی۔جس میں مہر غلام اکبر جھتیال(سابق وائس چیئرمین یوسی چکفرازی) ڈاکٹر مہر شہباز حسین جھتیال , مہر کلیم امام جھتیال ,مہر محمد اسلم جھتیال , مہر جاوید ساقی جھتیال , مہر عمران امیر جھتیال , مہر خلیل سانول جھتیال, مہر صفدر نوازش ,صاحب مہر محمد حسین جھتیال , مہر اشرف جھتیال , مہر ذیشان اکبرجھتیال ,سردار علی رضا جھتیال, مہر شہزاد جھتیال ,مہر برکت علی جھتیال, فوجی مہر محمد حسین جھتیال , مہر قیصر عباس جھتیال , مہر غلام رسول جھتیال (سابق کونسلر یوسی چکفرازی) مہر عمر دراز فاروقی جھتیال ,محمد بلال شاکر جھتیال,محمد صغیر جھتیال , حافظ محمد وسیم الیاس جھتیال اور اس کے علاوہ جھتیال یوتھ نے کثیر تعداد میں شرکت کی.
جھتیال یوتھ کا 6 ستمبر یوم دفاع کے اس عظیم اورسنہری دن پہ پاکستان آرمی سے اظہار محبت کرتے ہوئے کیک کاٹ کر اپنی خوشی کا اظہار کیا.اور سبز ہلالی پرچم لہرا کر مسلمانوں کے جذبات کی عکاسی کی. مقررین کا کہنا تھا کہ پاکستان آرمی نےاس دن سے آج تک پاکستان کا سر فخر سے بلند کر دیا اور جذبہ ایمانی کے ذریعے بھارت کے شب خون کا منہ توڑ جواب دیا۔اور جھتیال یوتھ کے شاہینوں نے پاک فوج کے نوجوانوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ 6 ستمبر کی تاریخ کی طرح جھتیال قوم کے محافظوں کے ساتھ کھڑی ہے۔دشمن کے ہر چیلنج کا ڈٹ کر مقابلہ کرنے کےلیے تیار ہے۔دشمن کی طرف سے ہماری افواج کو بدنام کرنے کی مذموم سازشیں کبھی کامیاب نہ ہوں گی۔اور جھتیال یوتھ کے شاہینوں کا مزید یہ کہنا تھاکہ 6 ستمبر 1965 وہ دن ہے۔جب دشمن اپنے نا پاک عزائم سے مادر وطن پر حملہ آور ہوا لیکن افواج پاکستان نے بہادری کی عظیم داستان رقم کرتے ہوئے اپنے سے کئی گنا بڑے دشمن کو شکست سے دو چار کیا اور انکے تمام نا پاک عزائم خاک میں ملا دئیے۔اور ثابت کیا کہ جنگیں اسلحے یا تعداد سے نہیں بلکہ جذبہ ایمان سے لڑی جاتی ہیں۔
6 ستمبر 1965 کو پاک فوج کے نوجوانوں نے اپنے جذبے اور حوصلوں سے بھارتی غرور اور نا پاک عزائم بی آر بی نہر میں بہا دئیے۔اور بھارت کا لاہور پر قبضے کا خواب چکنا چور کر دیا۔میجر عزیز بھٹی شہید نے وطن کی خاطر اپنی جان قربان کر کے دشمن کو بتا دیا کہ وطن کی حفاظت کےلیے ہم کچھ بھی کر گزرنے کےلیے تیار ہیں۔شرکاء سے مہر غلام اکبر جھتیال کا کہنا تھا کہ مہر حاجی اللہ دتہ جھتیال شہید کی شہادت نے صرف جھتیال قوم کا نہیں بلکہ مادر وطن کا سرفخر سے بلند کیا.
“لگانے آگ جو آئے تھے آشیانے ک

وہ شعلے اپنے لہو سے بجھا دئیے تم نے”

تقریب کے آخر میں پروفیسر مددعلی جھتیال نے جھتیال یوتھ کا اظہار تشکر کیا.ان کا کہنا تھا کہ پاک آرمی کی طرح نظم وضبط اور اتحاد ویگانگت سے قومیں مضبوط ہوجاتی ہیں.اور تقریب کےاختتام پہ شہداء کے لئے فاتحہ خوانی کرتے ہوئے حافظ محمدوسیم جھتیال نے بلند درجات کے لیے دعا کرائی.
آخر میں جھتیال یوتھ کے شاہینوں کے نام
⚘خواہش سے نہیں گرتے پھل جھولی میں ⚘وقت کی شاخ کو میرے دوست ہلانا ہو گا ⚘کچھ نہیں ہو گا اندھیروں کو برا کہنے سے⚘ اپنے حصے کا دیا خود ہی جلانا ہو گا ⚘✌

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں